Breaking News
Home / اہم خبریں / وقتی آرام کیلئے لگایا جانے والا انجکشن جو مریض کو نشے کا عادی بنا سکتا ہے

وقتی آرام کیلئے لگایا جانے والا انجکشن جو مریض کو نشے کا عادی بنا سکتا ہے

وقتی آرام کیلئے لگایا جانے والا انجکشن جو مریض کو نشے کا عادی بنا سکتا ہے

لاہور: (ویب ڈیسک) ‘دن کے وقت کرفیو نافذ ہوتا تھا۔ سوات میں آپریشن (2008ء کے آخری مہینے میں) جاری تھا۔ نشہ تو دُور کی بات کھانے کو بھی کچھ نہیں مل رہا تھا۔ نقاہت کی وجہ سے نیم بے ہوشی کے عالم میں مجھے ایک میڈیکل پریٹکشنر کے پاس لے جایا گیا، جس نے مجھے انجکشن لگایا۔ لمحوں کے حساب سے مجھے ایسا قرار آیا جیسا ہیروئن لینے کے بعد بھی نہ آتا تھا۔

نسوار سے شروع ہونے والا میرا نشہ، تمباکو نوشی اور چرس سے ہوتا ہوا ہیروئن پر آکر رک گیا تھا، مگر مذکورہ انجکشن کی بات ہی کچھ اور تھی۔ٰ یہ کہنا ہے اکبر علی کا جو گل کدہ نمبر ایک، سیدو شریف سوات کا رہنے والا ہے۔ جب سوات میں پاک فوج کی طرف سے اہلِ سوات کو نقل مکانی کا کہا گیا، تو اکبر علی اپنے دیگر 4 دوستوں کے ساتھ پشاور منتقل ہوا۔ اکبر علی اور اس کے دوست ہیروئن کا نشہ کرتے تھے۔ وہاں اکبر علی نے دوستوں کو اپنے انجکشن والے تجربے کے بارے میں بتایا اور یوں سب اس مہلک نشے کے عادی ہوگئے۔

اکبر علی کہتے ہیں کہ ‘ہم 5 دوست ہیروئن چھوڑ کر انجکشن لگوانے لگے۔ اول اول روزانہ ایک انجکشن لگواتے رہے۔پھر بتدرہج 3، 3 اور 4، 4 انجکشن لگوانے لگے۔ جب نوبت روزانہ 8 سے 10 انجکشنوں تک پہنچ گئی تو ایک دوست جان کی بازی ہار گیا، اسی ہفتے جب دوسرا دوست بھی اس مہلک نشے کی نذر ہوا تو ہم ڈر گئے اور واپس ہیروئن پینے لگ گئے۔ اسی اثنا میں امن بحال ہوا اور ہم واپس سوات آگئے’۔اکبر علی اپنے اوپر بیتنے والی کہانی سناتے ہوئےرگوں میں اُترنے والا یہ نشہ کیا ہے؟

سوات کے ایک نجی ری ہیبلی ٹیشن سینٹر ‘نوے جوند’ (نئی زندگی) کے منیجنگ ڈائریکٹر ریاض احمد کے بقول اس وقت سوات میں سب سے سستا اور خطرناک ترین نشوں میں سے ایک یہ انجکشن کے ذریعے رگوں میں اتارنے والا نشہ ہے۔ وہ بتاتے ہیں کہ ‘2 مختلف قسم کی ادویات ‘Nalbin’ اور ‘Gravinate’ کو سرنج کے ذریعے مکس کرکے ایک محلول تیار کی جاتی ہے اور اسے نس/ رگ کے ذریعے جسم میں داخل کیا جاتا ہے۔

لمحوں کے حساب سے اس کا خواب آور اثر محسوس ہوتا ہے’۔ مینگورہ شہر سے تعلق رکھنے والے ڈاکٹر عبداللہ نے اس نشے کا بغور جائزہ لیا ہے۔ وہ کہتے ہیں کہ دراصل ‘Tramal’ یا ‘Nalbin’ انجکشن لگوانے سے مریض کا جی متلاتا ہے اور اسے شدید قسم کی الٹیاں آتی ہیں، تو ‘Gravinate’ کو ضمنی اثرات یعنی ‘Side Effects’ کا راستہ روکنے کے لیے استعمال میں لایا جاتا ہے۔

اب اس کا محلول تیار کرکے اسے نشے کے طور پر استعمال میں لایا جاتا ہے جس کی زیادہ خوراک جان لیوا ثابت ہوتی ہے’۔ سستے ترین نشوں میں سے ایک: اکبر علی جس وقت اس نشے کے عادی تھے اس وقت اس نشے کی قیمت 30 تا 40 روپے تھی جب کہ اب مارکیٹ میں ایک ‘Nalbin’ انجکشن کی قیمت 83 روپے، ‘Gravinate’ کی قیمت 10 روپے اور سرنج کی قیمت بھی 10 روپے ہے۔ کل ملا کر یہ رقم 103 روپے بنتی ہے۔ مگر اکبر علی کہتے ہیں کہ ‘جس وقت ہم اس کے عادی تھے،

تو کئی بار مختلف میڈیکل اسٹور والوں نے ہم سے 30 کے بجائے 60 روپے بھی لیے۔ ہم مجبور تھے۔ آپ کہہ سکتے ہیں کہ یہ ہماری مجبوری کا ایک طرح سے غلط فائدہ اٹھایا جا رہا تھا’۔ مینگورہ شہر کے ایک میڈیکل پریکٹیشنر فواد علی کہتے ہیں کہ بظاہر حکومت کی طرف سے ‘Nalbin’ بغیر کسی ڈاکٹری نسخے کے کسی بھی شہری کو دینے پر پابندی ہے مگر ‘بلیک’ میں یہ انجکشن مینگورہ شہر یا سیدو شریف میں واقع بیشتر میڈیکل اسٹورز سے باآسانی مل سکتا ہے۔ ‘اتنی زیادہ رقم بھی نہیں دینی پڑتی، محض 20 یا 30 روپے زیادہ ادا کریں تو یہ نسخہ کوئی بھی آپ کو تھما دے گا’۔

Share

About admin

Check Also

ایک گھنٹے کا سفر 10 منٹ میں طے. یہ منصوبہ پاکستان کے کس شہر میں تیار ہو گا جانیے

ایک گھنٹے کا سفر 10 منٹ میں طے. یہ منصوبہ پاکستان کے کس شہر میں …

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Powered by themekiller.com