Breaking News
Home / انٹرنیشنل / معروف اینکر سموسے بیچنے پر مجبور

معروف اینکر سموسے بیچنے پر مجبور

معروف اینکر سموسے بیچنے پر مجبور

اسلام آباد( نیوز ڈیسک ) پڑوسی ملک میں حکومت کی تبدیلی کے بعد متعدد میڈیا ہاؤس بند ہونے سے ہزاروں میڈیا ورکرز بیروزگار ہو چکے ہیں۔ صحافیوں کے مطابق یہ ادارے نئی حکومت کی جانب سے عائد کردہ سنسر شپ اور مبینہ تشدد کے واقعات اور مالی مشکلات کی وجہ سے بند ہوئے۔میڈیا اداروں کی بندش کی وجہ سے خواتین صحافی

بھی بہت زیادہ متاثر ہوئی ہیں اور اُن میں سے بیشتر خواتین اب صرف گھروں تک ہی محدود ہیں تاہم بڑی تعداد میں مرد صحافی بھی بیروزگار ہوئے ہیں۔

سوشل میڈیا پر ایک ٹی وی اینکر موسیٰ محمدی کی تصویر وائرل ہے، جس میں وہ سڑک کنارے سموسے بیچتے ہوئے دکھائی دے رہے ہیں۔ موسیٰ محمدی برسوں سے میڈیا کا حصہ تھے

تاہم پڑوسی ملک میں سنگین معاشی صورتحال کی وجہ سے وہ اپنی روزمرہ ضرورتوں کیلئے سموسے بیچ رہے ہیں۔ صحافی بلال سروری نے وائرل تصویر پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ نئی حکومت کے دور حکومت میں مختلف پیشوں کے ملازمین بیروزگار ہوگئے ہیں۔

کہا جاتا ہے کہ کچھ خواتین اساتذہ منہ ڈھانپ کر بھیک مانگتی ہیں۔وائرل تصویر نے نیشنل ریڈیو اور ٹیلی ویژن کے ڈائریکٹر جنرل احمد اللہ واثق کی توجہ بھی حاصل کی۔ انہوں نے اپنے ٹویٹ میں لکھا کہ وہ سابق ٹی وی اینکر اور رپورٹر کو اپنے محکمے میں تعینات کریں گے، ہمیں تمام پیشہ ور افراد کی ضرورت ہے۔

Share

About admin

Check Also

پاکستان کچھ بنگلہ دیش سے ہی سیکھ لے،بنگلہ دیش کے حکومت کے بجلی کی بچت کے لیے حیرت انگیز اقدامات

پاکستان کچھ بنگلہ دیش سے ہی سیکھ لے،بنگلہ دیش کے حکومت کے بجلی کی بچت …

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Powered by themekiller.com