Breaking News
Home / اہم خبریں / میں پاکستان میں بڑی تکلیف میں تھا اور یہاں لندن میں پرسکون ہوں ۔۔۔۔

میں پاکستان میں بڑی تکلیف میں تھا اور یہاں لندن میں پرسکون ہوں ۔۔۔۔

لاہور (ویب ڈیسک) نامور کالم نگار سہیل وڑائچ اپنے ایک کالم میں نواز شریف کے مرحومہ بینظیر بھٹو کو لکھے گئے تصوراتی خط میں لکھتے ہیں ۔۔۔۔۔۔۔۔۔محترمہ :ہم اور پیپلز پارٹی متفق ہیں کہ خان کو جلد سے جلد رخصت ہونا چاہئے لیکن اب جب فیصلہ کن مرحلہ آیا ہے جب ہم نے

اجتماعی استعفے دینے تھے اور لانگ مارچ کرنا تھا، پیپلز پارٹی پیچھے ہٹ گئی ہے آپ تو سیاسی جماعتوں سے جو وعدہ کرتی تھیں وہ نبھاتی تھیں ہم نے میثاقِ جمہوریت کا بےمثال معاہدہ کیا افسوس کہ اس پر ابھی تک مکمل عمل نہیں ہو سکا لیکن ہماری پارٹیوں کو کم از کم اپنے وعدوں کا پاس تو کرنا چاہئے۔شکوہ یہ بھی ہے کہ زرداری صاحب کو علم ہے کہ میں قید کے دوران دو تین بار جان سے جاتے بچا ہوں، ایسے میں مجھ سے یہ مطالبہ کہ میں آ کر تحریک چلائوں انہیں زیب نہیں دیتا۔ ہمیں ایک دوسرے کی جان، مال اور عزت کا خیال کرنا چاہئے۔ سیاست تو ہوتی رہتی ہے لیکن تحریک انصاف والے تو میری جان کے درپے تھے، بڑی تکلیف میں رہا یہاں لندن آ کر نسبتاً بہتر اورپُر سکون ہوں۔ زرداری صاحب اور بلاول کو سمجھائیں کہ ہم نے ذاتی الزامات لگاناایک عرصہ سے بند کر دیے ہیں اس لئے یہ سلسلہ دوبارہ سے نہ کھولا جائے۔محترمہ!آپ زرداری صاحب کو یہ بھی سمجھایئے گا کہ وہ بار بار مجھے پنجاب میں تبدیلی اور چودھری پرویز الٰہی کو وزیراعلیٰ پنجاب بنانے کی بات کرتے ہیں، میں ہر بار بات بدل دیتا ہوں۔ آپ انہیں بتا ئیں کہ پیپلز پارٹی اور ن لیگ دونوں کے لئے چودھری پرویز الٰہی کو وزیر اعلیٰ بنانا خطرناک ہو گا کیونکہ وہ دونوں پارٹیوں کے ارکان اسمبلی کو قابو کر لیں گے اور پھر چودھری پرویز الٰہی سے پنجاب واپس لینا بزدار کی بہ نسبت زیادہ مشکل ہو گا۔ میں نے آج ہی مریم نواز اور مولانا فضل الرحمٰن دونوں کو فون کر کے کشیدگی کم کرنے کو کہا ہے، آپ بھی اس سلسلے میں زرداری صاحب اور بلاول کو پیغام بھیجیں کہ وہ پی ڈی ایم کی اگلی میٹنگ میں اتحاد کو چلانے، مضبوط کرنے اور بہتر بنانے کی تجاویز کے ساتھ آئیں۔اگر پی ڈی ایم کو نقصان پہنچا تو پوری جمہوری جدوجہد کو نقصان پہنچے گا۔ مجھے علم ہے کہ عالمِ بالا میں بھی جمہوری طبقات کو یہ فکر ضرور لاحق ہو گی کہ اگر پی ڈی ایم نہیں چلتی تو عمران حکومت کا خاتمہ کیسے ہو گا۔ ہر چیز کا حل مذاکرات میں پوشیدہ ہے، زرداری صاحب اور مولانا فضل الرحمٰن کی ون ٹو ون ملاقات اس حوالے سے فائدہ مند ثابت ہو سکتی ہے۔بی بی !اگر آپ اجازت دیں تو مشکل مواقع پر آپ کو خط لکھ کر آپ سے مدد اور رہنمائی حاصل کر لیا کروں؟ امید ہے آپ کی کلثوم سے تفصیلی ملاقات ہو گئی ہو گی، وہ اور مریم تو آپ کی بہت فین ہیں۔ ابا جی میاں شریف نے آپ کو باقر خانیاں اور امرتسری میٹھی بالائی والی لسی بھجوائی تھی امید ہے آپ کو پسند آئی ہو گی۔ میری طرف سے اپنے والد ذوالفقار علی بھٹو کو سلام و آداب والسلام: محمد نواز شریف۔۔

Share

About admin

Check Also

ڈالر کی غلامی سے آزادی حاصل کر لی ۔۔۔اب تجارت اور کاروبار میں اپنی کرنسی استعمال کی جائیگی،اہم اور مثالی فیصلہ لے لیاگیا

ڈالر کی غلامی سے آزادی حاصل کر لی ۔۔۔اب تجارت اور کاروبار میں اپنی کرنسی …

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Powered by themekiller.com